03 مئی 2019ء

عزت ماب سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلہ کے مطابق موبائل ٹیکس بحال کردیا گیا

اسلام آباد 3 مئی 2019 (پ ر) عزت ماب سپریم کورٹ آف پاکستان نے جون 2018 میں ودہولڈنگ ٹیکس، سیلز ٹیکس اور سروسز چارجز معطل کردیئے تھے۔ سیلولر موبائل اپریٹر نے فیصلہ کی رو کے مطابق اس پر عمل کیا اور 100/- روپے کے ری چارج پر 100/- روپے کا ہی بیلنس دیا جاتا تھا۔ یہ بھی یاد رہے کہ پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن کو قیمتیں مقرر کرنے کا اختیار نہیں۔ موبائل مارکیٹ میں مسابقت کا اصول کارفرما ہے ا اور ٹیکسز اور سروس چارجز کی معطلی کے نتیجہ میں سیلولر موبائل آپریٹرز نے سٹینڈرڈ پری پیڈ ٹیرف پیکیجز کی قیمتوں کو ایڈجسٹ کیا۔ہائی برڈ بنڈلز/ ماہانہ کارڈز کی صورت میں صارفین کے لئے وائس، ایس ایم ایس اور ڈیٹا کی صورت میں اصافی مراعات دی گئیں ۔ آپریٹرز نے کئی دوسرے پیکجز کی قیمتوں میں ردوبدل کیا۔ 24 اپریل 2019 کو سپریم کورٹ آف پاکستان نے درج ذیل حکم صادر فرمایا ”وجوہات بعد میں بتائی جائیں گی اور انسانی حقوق کا یہ معاملہ تمام عبوری احکام پبلک محصولات میں دخل دیئے بغیر داخل دفتر کیا جاتا ہے“۔ عزت ماب سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم کے مطابق آپریٹرز نے موجودہ ٹیرف میں کوئی اصافہ نہیں کیا صرف موجودہ ٹیرف پر ودہولڈنگ ٹیکس، جنرل سیلز ٹیکس/ فیڈرل ایکسائز ڈیوٹیز اور سروسز چارجز بحال کیے ہیں۔ پی ٹی اے سیلولر آپریٹرز کے شائع ٹیرف او رقابل اطلاق ٹیکسز کو نگاہ میں رکھتا ہے اور کوئی بھی شائع ٹیرف اور قابل اطلاق ٹیکسزکا زیادہ نافذ کی اطلاع ملنے پر پی ٹی اے کاروائی کرتاہے۔
 
 
طیبہ افتخار
اسسٹنٹ ڈائریکٹر تعلقات عامہ