09 جون 2017ء

پریس ریلیز


پریس ریلیز

اسلام آباد: 09 جون  2017 (پ ر)پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) اپنے وژن کے مطابق نہ صرف صاف شفاف ریگولیٹری ماحول اور سرمایہ کاری کو فروغ دے رہا ہے بلکہ صارفین کے حقوق کے تحفظ اور انفارمیشن کمیونیکیشن ٹیکنالوجی کی خدمات کو بھی یقینی بنانے کے لئے اقدامات کر رہا ہے۔ موبائل فون آپریٹروں کو جاری لائسنس کی بنیادی شرط معیاری سروس کی فراہمی ہے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لئے پی ٹی اے سال بھر سروس کے معیار اور درستگی پر نظر رکھتا ہے۔ معیاری سروس کے متعلق تمام سروے میں جدید ترین ٹیکنالوجی زیر استعمال ہوتی ہے۔

جوں جوں تھری جی/فور جی کا دائرہ وسیع ہورہا ہے پی ٹی اے بھی چھوٹے شہروں تک معیاری سروس کو یقینی بنانے کے لئے سروے کررہا ہے۔ اس سال اب تک پی ٹی اے نے 24 شہروں میں سروس کے معیار کو چیک کر نے کے لئے سروے مکمل کر لئے ہیں جن کے نتائج جلد ہی عوام کے لئے شائع کئے جائیں گے۔اوپن سگنل(https://opensignal.com/reports/2016/11/state-of-lte)جیسے خودمختار ذرائع کے مطابق پاکستان میں فور جی کی سپیڈ اس وقت 11.71 ایم بی پی ایس ہے جو کئی ممالک سے بہتر ہے۔اسی ادارے کے مطابق فور جی خدمات اب پاکستان کی 50% آبادی کو میسر ہیں۔

اس کے علاوہ پی ٹی اے میں صارفین کی شکایات کے ازالہ کے لئے ایک کنزیومر پروٹیکشن ڈائریکٹوریٹ اپنی خدمات سر انجام دے رہا ہے۔جس کے ساتھ بذریعہ فون 0800-55055 ای میلcomplaint@pta.gov.pk اور ویب سائٹ www.pta.gov.pk.پر رابطہ کیا جاسکتا ہے۔

واضح رہے کہ تھری جی/ فور جی خدمات کی دور دراز علاقوں میں مزید فراہمی اور بہتری کی بہر حال گنجائش موجود ہے اور موبائل آپریٹر اس حوالے سے اپنی خدمات کو بہتر کر رہے ہیں یہی وجہ ہے کہ محض تین سالوں میں تھری جی اور فور جی خدمات پاکستان کے 250 شہروں میں دستیاب ہے۔ پی ٹی اے مستقبل میں بھی پاکستان میں جدید ترین ٹیکنالوجیز متعارف کرانے کے لئے ہمیشہ کی طرح پرعزم ہے۔

 

خرم مہران

ڈائریکٹر تعلقات عامہ